Revelation 5 Urdu

From Textus Receptus

Jump to: navigation, search

۱

-اور جو تخت پر بَیٹھا تھا مَیں نے اُس کے دہنے ہاتھ میں ایک کِتاب دیکھی جو اندر سے اور باہِر سے لِکھی ہُوئی تھی اور اُسے سات مُہریں لگا کر بند کِیا گیا تھا

۲

-پھِر مَیں نے ایک زورآور فرِشتہ کو بُلند آواز سے یہ مُنادی کرتے دیکھا کہ کَون اِس کِتاب کو کھولنے اور اُس کی مُہریں توڑنے کے لائِق ہے؟

۳

-اور کوئی شخص آسمان پر یا زمِین پر یا زمِین کے نِیچے اُس کِتاب کو کھولنے یا اُس پر نظر کرنے کے قابِل نہ نِکلا

۴

-تب مَیں اِس بات پر زار زار رونے لگا کہ کوئی اُس کِتاب کو کھولنے اور پڑھنے یا اُس پر نظر کرنے کے لائِق نہ نِکلا

۵

-تب اُن بُزُرگوں میں سے ایک نے مُجھ سے کہا کہ مت رو۔ دیکھ۔ یہُوداؔہ کے قبِیلہ کا وہ ببر جو داؔؤد کی اصل ہے اُس کِتاب کو کھولے، اور اُس کی ساتوں مُہروں کو توڑنے

۶

تب مَیں نے نگاہ کی، اور کِیا دیکھتا ہوں، اُس تخت اور چاروں جانداروں اور اُن بُزُرگوں کے بِیچ میں گویا ذبح کِیا ہُؤا ایک برّہ کھڑا ہے۔ اُس کے سات سِینگ اور سات آنکھیں تھِیں۔ یہ خُدا کی ساتوں رُوحیں ہیں جو تمام رُوی زمِین پر بھیجی گئی ہیں

۷

-اُس نے آکر تخت پر بَیٹھے ہُوئے کے دہنے ہاتھ سے اُس کِتاب کو لے لِیا

۸

جب اُس نے کِتاب لے لی تو وہ چاروں جاندار اور چَوبِیس بُزُرگ اُس برّہ کے سامنے گِر پڑے اور ہر ایک کے ہاتھ میں بربط اور عُود سے بھرے ہُوئے سونے کے پیالے تھے۔ یہ مُقدّسوں کی دُعائیں ہیں

۹

اور وہ یہ نیا گِیت گانے لگے کہ تُو ہی اِس کِتاب کو لینے اور اُس کی مُہریں کھولنے کے لائِق ہے کیونکہ تُو نے ذِبح ہوکر اپنے خُون سے ہر ایک قبِیلہ اور اہلِ زُبان اور اُمّت اور قَوم میں سے خُدا کے واسطے لوگوں کو خرِید لِیا

۱۰

-اور ہم کو ہمارے خُدا کے لِئے بادشاہ اور کاہِن بنا دِیا اور ہم زمِین پر بادشاہیت کریں گے

۱۱

-اور جب مَیں نے نِگاہ کی تو اُس تخت اور اُن جانداروں اور بُزُرگوں کے گِردا گِرد بُہت سے فرِشتوں کی آواز سُنی جِن کا شُمار لاکھوں اور کروڑوں تھا

۱۲

-اور وہ بُلند آواز سے کہتے تھے کہ ذبح کِیا ہُؤا برّہ ہی قُدرت اور دَولت اور حِکمت اور طاقت اور عِزّت اور تمجِید اور حمد کے لائِق ہے

۱۳

پھِر مَیں نے آسمان اور زمِین اور زمِین کے نِیچے کی اور سمُندر کی سب مخلُوقات کو یعنی سب چِیزوں کو جو اُن میں ہیں یہ کہتے سُنا کہ جو تخت پر بَیٹھا ہے اُس کی اور برّہ کی حمد اور عِزّت اور تمجِید اور سلطنت ابدُالآباد رہے

۱۴

-تب چاروں جانداروں نے آمِین کہا اور چَوبِیس بُزُرگوں نے گِر کر اُسے جو ابد تک زِندہ ہے سِجدہ کِیا

Personal tools