2 Samuel 23 Urdu

From Textus Receptus

Jump to: navigation, search
23 سموئیل-۲

۱

داؤُؔد کی آخِری باتیں یہ ہیں:۔ داؤُؔد بِن یسّؔی کہتا ہے۔ یعنی یہ اُس شخص کا کلام ہے جو سرفراز کِیا گیا اور یعقُؔوب کے خُدا کا ممسُوح اور اِسؔرائیل کا شِیرِین نغمہ ساز ہے۔

۲

خُداوند کی رُوح نے میری معرفت کلام کِیا اور اُسکا سُخن میری زُبان پر تھا۔

۳

اِسؔرائیل کے خُدا نے فرمایا۔ اِسؔرائیل کی چٹان نے مُجھ سے کہا۔ ایک ہے جو صداقت سے لوگوں پر حکُومت کرتا ہے۔ جو خُدا کے خَوف کے ساتھ حکُومت کرتا ہے۔

۴

وہ صُبح کی رَوشنی کی مانِند ہوگا جب سُورج نِکلتا ہے۔ اَیسی صُبح جِس میں بادل نہ ہوں۔ جب نرم نرم گھاس زمِین میں سے بارِش کے بعد کی صاف چمک کے باعِث نِکلتی ہے۔

۵

میرا گھر تو سچ مُچ خُدا کے سامنے اَیسا ہے بھی نہیں تَو بھی اُس نے میرے ساتھ ایک دائِمی عہد جِسکی سب باتیں مُعیّن اور پایدار ہیں باندھا ہے کیونکہ یِہی میری ساری نجات اور ساری مُراد ہے۔ گو وہ اُسکو بڑھاتا نہیں۔

۶

پر ناراست لوگ سب کے سب کانٹوں کی مانِند ٹھہرینگے جو ہٹا دِئے جاتے ہیں کیونکہ وہ ہاتھ سے پکڑے نہیں جاسکتے۔

۷

بلکہ جو آدمی اُنکو چُھوئے ضرُور ہے کہ وہ لوہے اور نیزہ کی چھڑ سے مُسلّح ہو۔ سو وہ اپنی ہی جگہ میں آگ سے بِالکُل بھسم کر دِئے جائینگے۔

۸

اور داؤُؔد کے بہادُروں کے نام یہ ہیں:- یعنی تحکمونی یوشیؔب بشیبت جو سِپہ سالاروں کا سردار تھا۔ وُہی ایزنی ادِیؔنوتھا جِس سے آٹھ سَو ایک ہی وقت میں مقتُول ہُوئے۔

۹

اُسکے بعد ایک اخُؔوحی کے بیٹے دوؔدے کا بیٹا الِؔیعزر تھا۔ یہ اُن تِینوں سُورماؤں میں سے ایک تھا جو داؤُؔد کے ساتھ اُس وقت تھے جب اُنہوں نے اُن فِلسِتیوں کو جو لڑائی کے لئِے جمع ہُوئے تھے للکارا حالانکہ سب بنی اِسرائیل چلے گئے تھے۔

۱۰

اور اُس نے اُٹھ کر فِلسِتیوں کو اِتنا مارا کہ اُسکا ہاتھ تھک کر تلوار سے چِپک گیا اور خُداوند نے اُس دِن بڑی فتح کرائی اور لوگ پھِر کر فقط لُوٹنے کے لئِے اُسکے پِیچھے ہولئِے۔

۱۱

بعد اُسکے ہراری اجؔی کا بیٹا سمّؔہ تھا اور فِلسِتیوں نے اُس قطعۂِ زمِین کے پاس جو مسُور کے پیڑوں سے بھرا تھا جمع ہو کر دَل باندھ لِیا تھا اور لوگ فِلسِتیوں کے آگے سے بھاگ گئے تھے۔

۱۲

لیکن اُس نے اُس قطعہ کے بِیچ میں کھڑے ہو کر اُسکو بچایا اور فِلسِتیوں کو قتل کِیا اور خُداوند نے بڑی فتح کرائی۔

۱۳

اور اُن تِیس سرداروں میں سے تِین سردار نِکلے اور فصل کاٹنے کے مَوسم میں داؤُؔد کے پاس عدُلّؔام کے مغارہ میں آئے اور فِلسِتیوں کی فَوج رفائِؔیم کی وادی میں خَیمہ زن تھی۔

۱۴

اور داؤُؔد اُس وقت گڑھی میں تھا اور فِلسِتیوں کے پہرے کی چَوکی بَیت لؔحم میں تھی۔

۱۵

اور داؤُؔد نے ترستے ہُوئے کہا اَے کاش کوئی مُجھے بَیت لحم کے اُس کُنوئیں کا پانی پِینے کو دیتا جو پھاٹک کے پاس ہے!۔

۱۶

اور اُن تِینوں بہادُروں نے فِلسِتیوں کے لشکر میں سے جا کر بَیت لؔحم کے کُنوئیں سے جو پھاٹک کے برابر ہے پانی بھر لِیا اور اُسے داؤُؔد کے پاس لائے لیکن اُس نے نہ چاہا کہ پِئے بلکہ اُسے خُداوند کے حضُور اُنڈیل دِیا۔

۱۷

اور کہنے لگا اَے خُداوند مُجھ سے یہ ہر گِز نہ ہو کہ مَیں اَیسا کرُوں۔ کیا مَیں اُن لوگوں کا خُون پِیُوں جِنہوں نے اپنی جان جوکھوں میں ڈالی؟ اِسی لئِے اُس نے نہ چاہا کہ اُسے پِئے۔ اُن تِینوں بہادُروں نے اَیسے اَیسے کام کِئے۔

۱۸

اور ضؔرویاہ کے بیٹے یُؔوآب کا بھائی ابِیشؔے اُن تِینوں میں افضل تھا۔ اُس نے تِین سَو پر اپنا بھالا چلا کر اُن کو قتل کِیا اور تینوں میں نامی تھا۔

۱۹

کیا وہ اُن تِینوں میں مُعزّز نہ تھا؟ اِسی لئِے وہ اُن کا سردار ہُئوا تَو بھی وہ اُن پہلے تِینوں کے برابر نہیں ہونے پایا۔

۲۰

اور یہوؔیدع کا بیٹا بناؔیاہ قبضِؔیل کے ایک سُورما کا بیٹا تھا جِس نے بڑے بڑے کام کئِے تھے۔ اِس نے مؔوآب کے ارؔی ایل کے دونوں بیٹوں کو قتل کِیا اور جا کر برف کے مَوسم میں ایک غار کے بِیچ ایک شیرِ بَبر کو مارا۔

۲۱

اور اُس نے ایک جِسیم مِصری کو قتل کِیا۔ اُس مِصری کے ہاتھ میں بھالا تھا پر یہ لاٹھی ہی لئِے ہُوئے اُس پر لپکا اور مِصری کے ہاتھ سے بھالا چھِین لِیا اور اُسی کے بھالے سے اُسے مارا۔

۲۲

پس یہؔویدع کے بیٹے بناؔیاہ نے اَیسے اَیسے کام کئِے اور تِینوں بہادُروں میں نامی تھا۔

۲۳

وہ اُن تِیسوں سے زِیادہ مُعزّز تھا پر وہ اُن پہلے تِینوں کے برابر نہیں ہونے پایا اور داؤُؔد نے اُسے اپنے مُحافِظ سِپاہِیوں پر مُقرّر کِیا۔

۲۴

اور تِیسوں میں یُؔوآب کا بھائی عساؔہیل اور الؔحنان بَیت لؔحم کے دوؔدو کا بیٹا۔

۲۵

حرودی سؔمّہ۔ حرودی اِلقؔہ۔

۲۶

فلطی خلِؔص۔ عؔیرا بِن عقّؔیس تقوعی۔

۲۷

عنتوتی ابؔی عزر۔ حوساتی مبؔونی۔

۲۸

اخوحی ضلؔمون۔ نطوفاتی مؔہری۔

۲۹

نطوفاتی بعنہؔ کا بیٹا حِلؔب۔ اِتؔی بِن رِیبؔی بنی بِنیمِین کے جِبؔعہ کا۔

۳۰

فرعاتونی بِنایاؔہ اور جعؔس کے نالوں کا ہِدَّؔی۔

۳۱

عرباتی ابؔی علبُؔون۔ برحُومی عزماؔوت۔

۳۲

سعلبونی الیحبہ بنی یسِین یُونتؔن۔

۳۳

ہراری سؔمّہ۔ اخؔی آم بِن سؔرار ہراری۔

۳۴

الیفلؔط بِن احسؔبی معکاتی کا بیٹا الؔی عام بِن اخِتُؔیفل جلونی۔

۳۵

کِرمِلی حصؔرو۔ اربی فؔعری۔

۳۶

ضؔوباہ کے ناتؔن کا بیٹا اِجؔال۔ جدی باؔنی۔

۳۷

عمُّونی صِلؔق۔ بیروتی نؔحری۔ ضؔرویاہ کے بیٹے یُؔوآب کے سِلح بردار۔

۳۸

اِتری عؔیرا۔ اِتری جؔرِیب۔

۳۹

اور حِتّی اورِیّؔاہ۔ یہ سب سَینتیِس تھے۔

Views
Personal tools
Navigation
Toolbox