2 Samuel 17 Urdu

From Textus Receptus

Jump to: navigation, search
17 سموئیل-۲

۱

اور اخِتُؔیفل نے ابی سلؔوم سے یہ بھی کہا کہ مُجھے ابھی بارہ ہزار مَرد چُن لینے دے اور مَیں اُٹھ کر آج لی رات کو داؤُؔد کا پِیچھا کرُونگا۔

۲

اور اَیسے حال میں کہ وہ تھکا ماندہ ہو اور اُسکے ہاتھ ڈِھیلے ہوں مَیں اُس پر جا پڑُونگا اور اُسے ڈراؤُنگا اور سب لوگ جو اُسکے ساتھ ہیں بھاگ جائینگے اور مَیں فَقط بادشاہ کو مارُونگا۔

۳

اور مَیں سب لوگوں کو تیرے پاس لَوٹا لاؤُنگا۔ جِس آدمی کا تُو طالِب ہے وہ اَیسا ہے کہ گویا سب لَوٹ آئے۔ یُوں سب لوگ سلامت رہینگے۔

۴

یہ بات ابی سلؔوم کو اور اِسؔرا ئیل کے سب بزُرگوں کو بُہت اچھّی لگی۔

۵

اور ابی سلؔوم نے کہا اب ارکی حُؔوسی کو بھی بُلاؤ اور جو وہ کہے ہم اُسے بھی سُنیں۔

۶

جب حُؔوسی ابی سلؔوم کے پاس آیا تو ابی سلؔوم نے اُس سے کہا کہ اخِتُؔیفل نے تو یہ یہ کہا ہے۔ کیا ہم اُسکے کہنے کے مُطابِق عمل کریں؟ اگر نہیں تو تُو بتا۔

۷

حُؔوسی نے ابی سلؔوم سے کہا کہ وہ صلاح جو اخِتُؔیفل نے اِس بار دی ہے اچھّی نہیں۔

۸

ما سِوا اِسکے خُؔوسی نے یہ بھی کہا کہ تُو اپنے باپ کو اور اُسکے آدمِیوں کو جانتا ہے کہ وہ زبردست لوگ ہیں اور وہ اپنے دِل ہی دِل میں اُس رِیچھنی کی مانِند جِسکے بچّے جنگل میں چھِن گئے ہوں جھلّا رہے ہونگے اور تیرا باپ جنگی مَرد ہے اور وہ لوگوں کے ساتھ نہیں ٹھہریگا۔

۹

اور دیکھ اب تو وہ کِسی غار میں یا کِسی دُوسری جگہ چُھپا ہُئوا ہوگا اور جب شرُوع ہی میں تھوڑے سے قتل ہو جائینگے تو جو کوئی سُنیگا وہ یِہی کہے گا کہ ابی سلؔوم کے پَیروؤں کے درمِیان تو خُونریزی شرُوع ہے۔

۱۰

تب وہ بھی جو بہادُر ہے اور جِسکا دِل شیر کے دِل کی طرح ہے بِالکُل پِگھل جائیگا کیونکہ سارا اِسؔرائیل جانتا ہے کہ تیرا باپ زبردست آدمی ہے اور اُسکے ساتھ کے لوگ سُورما ہیں۔

۱۱

سو مَیں یہ صلاح دیتا ہُوں کہ داؔن سے بیرسؔبع تک کے سب اِسرائیلی سمُندر کے کنارے کی ریت کی طرح تیرے پاس کثرت سے اِکٹّھے کئِے جائیں اور تُو آپ ہی لڑائی پر جائے۔

۱۲

یُوں ہم کِسی نہ کِسی جگہ جہاں وہ مِلے اُس پر جا ہی پڑینگے اور ہم اُس پر اَیسے گِرینگے جَیسے شبنم زمِین پر گِرتی ہے۔ پھِر نہ تو ہم اُسے اور نہ اُسکے ساتھ کے سب آدمِیوں میں سے کِسی کو جِیتا چھوڑینگے۔

۱۳

ماسِوا اِسکے اگر وہ کِسی شہر میں گُھسا ہُئوا ہوگا تو سب اِسرائیلی اُس شہر کے پاس رسّیِاں لے آئینگے اور ہم اُسکو کھینچکر دریا میں کردینگے یہاں تک کہ اُسکا ایک چھوٹا سا پتّھر بھی وہاں نہیں مِلیگا۔

۱۴

تب ابی سلؔوم اور سب اِسرائیلی کہنے لگے کہ یہ مشوَرت جو ارکی حُؔوسی نے دی ہے اخِتُؔیفل کی مشوَرت سے اچھّی ہے کیونکہ یہ تو خُداوند ہی نے ٹھہرا دِیا تھا کہ اخِتُؔیفل کی اچھّی صلاح باطِل ہو جائے تا کہ خُداوند ابی سلؔوم پر بلا نازِل کرے۔

۱۵

تب حُؔوسی نے صدُؔوق اور ابیاؔتر کاہِنوں سے کہا کہ اخِتُؔیفل نے ابی سلؔوم کو اور بنی اِسرائیل کے بزُرگوں کو اَیسی اَیسی صلاح دی اور مَیں نے یہ یہ صلاح دی۔

۱۶

سو اب جلد داؤُؔد کے پاس کہلا بھیجو کہ آج رات کو دشت کے گھاٹوں پر نہ ٹھہر بلکہ جِس طرح ہوسکے پار اُتر جا تا کہ اَیسا نہ ہو کہ بادشاہ اور سب لوگ جو اُسکے ساتھ ہیں نِگل لئِے جائیں۔

۱۷

اور یُؔونتن اور اخِیمؔعض عَین راجِؔل کے پاس ٹھہرے تھے اور ایک لَونڈی جاتی اور اُنکو خبر دے آتی تھی اور وہ جا کر داؤُؔد کو بتا دیتے تھے کیونکہ مُناسِب نہ تھا کہ وہ شہر میں آتے دِکھائی دیتے۔

۱۸

لیکن ایک چھوکرے نے اُنکو دیکھ لِیا اور ابی سلؔوم کو خبر دی پر وہ دونوں جلدی کرکے نِکل گئے اور بحُؔورِیم میں ایک شخص کے گھر گئے جِسکے صحن میں ایک کنُواں تھا۔ سو وہ اُس میں اُتر گئے۔

۱۹

اور اُسکی عَورت نے پردہ لیکر کنُوئیں کے مُنہ پر بِچھایا اور اُس پر دلا ہُئوا اناج پَھیلا دِیا اور کُچھ معلُوم نہیں ہوتا تھا۔

۲۰

اور ابی سلؔوم کے خادِم اُس گھر پر اُس عَورت کے پاس آئے اور پُوچھا کہ اخِیمعؔض اور یُؔونتن کہاں ہیں؟ اُس عَورت نے اُن سے کہا وہ نالہ کے پار گئے اور جب اُنہوں نے اُنکو ڈُھونڈا اور نہ پایا تو یروشلِؔیم کو لَوٹ گئے۔

۲۱

اور اَیسا ہُئوا کہ جب یہ چلے گئے تو وہ کنُوئیں سے نِکلے اور جا کر داؤُؔد بادشاہ کو خبر دی اور وہ داؤُؔد سے کہنے لگے کہ اُٹھو اور دریا پار ہو جاؤ کیونکہ اخِتُؔیفل نے تُمہارے خِلاف اَیسی اَیسی صلاح دی ہے۔

۲۲

تب داؤُؔد اور سب لوگ جو اُسکے ساتھ تھے اُٹھے اور یَرؔدن کے پار گئے اور صُبح کی رَوشنی تک اُن میں سے ایک بھی اَیسا نہ تھا جو یَرؔدن کے پار نہ ہو گیا ہو۔

۲۳

جب اخِتُؔیفل نے دیکھا کہ اُسکی مشوَرت پر عمل نہیں کِیا گیا تو اُس نے اپنے گدھے پر زِین کَسا اور اُٹھ کر اپنے شہر کو اپنے گھر گیا اور اپنے گھرانے کا بندوبست کرکے اپنے کو پھانسی دی اور مَر گیا اور اپنے باپ کی قبر میں دفن ہُئوا۔

۲۴

تب داؤُؔد محناؔیم میں آیا اور ابی سلؔوم اور سب اِسرائیلی مَرد جو اُسکے ساتھ تھے یَرؔدن کے پار ہُوئے۔

۲۵

اور ابی سلؔوم نے یُؔوآب کے بدلے عماؔسا کو لشکر کا سردار کِیا۔ یہ عماؔسا ایک اِسرائیلی آدمی کا بیٹا تھا جِسکا نام اِتؔرا تھا۔ اُس نے ناؔحس کی بیٹی ابیِجیل سے جو یُؔوآب کی ماں ضؔرویاہ کی بہن تھی صُحبت کی تھی۔

۲۶

اور اِسرائیلی اور ابی سلؔوم جِلؔعاد کے مُلک میں خَیمہ زن ہُوئے۔

۲۷

اور جب داؤُؔد محناؔیم میں پُہنچا تو اَیسا ہُئوا کہ ناؔحس کا بیٹا سؔوبی بنی عمُّون کے ربّؔہ سے اور عمّؔی ایل کا بیٹا مکیِؔر لؔودبار سے اور بؔرزلّی جِلعادی راجلؔیِم سے۔

۲۸

پلنگ اور چارپائِیاں اور باسن اور مِٹّی کے برتن اور گیہُوں اور جَو اور آٹا اور بُھنا ہُئوا اناج اور لوبِئے کی پَھلِیاں اور مسُور اور بُھنا ہُئوا چبینا۔

۲۹

اور شہد اور مکھّن اور بھیڑ بکریاں اور گائے کے دُودھ کا پنیِر داؤُؔد کے اور اُسکے ساتھ کے لوگوں کے کھانے کے لئِے لائے کیونکہ اُنہوں نے کہا کہ وہ لوگ بیابان میں بُھوکے اور ماندے اور پِیاسے ہیں۔

Views
Personal tools
Navigation
Toolbox