1 Samuel 30 Urdu

From Textus Receptus

Jump to: navigation, search
30 سموئیل-۱

۱

اور اَیسا ہُئوا کہ جب داؤُؔد اور اُسکے لوگ تِیسرے دِن صِقؔلاج میں پُہنچے تو دیکھا کہ عمالِیقِیوں نے جنُوبی حِصّہ اور صِقؔلاج پر چڑھائی کرکے صِقؔلاج کو مارا اور آگ سے پُھونک دِیا۔

۲

اور عَورتوں کو اور جِتنے چھوٹے بڑے وہاں تھے سب کو اسِیر کر لِیا ہے۔ اُنہوں نے کِسی کو قتل نہیں کِیا بلکہ اُنکو لیکر چلا دِئے تھے۔

۳

سو جب داؤُؔد اور اُسکے لوگ شہر میں پُہنچے تو دیکھا کہ شہر آگ سے جلا پڑا ہے اور اُنکی بِیویاں اور بیٹے اور بیِٹیاں اسِیر ہو گئی ہیں۔

۴

تب داؤُؔد اور اُسکے ساتھ کے لوگ چِلّا چِلّا کر رونے لگے یہاں تک کہ اُن میں رونے کی طاقت نہ رہی۔

۵

اور داؤُؔد کی دونوں بِیویاں یزرعیلی اخؔینوعم اور کَرمِلی ناباؔل کی بِیوی ابِیجؔیل اسِیر ہو گئی تھِیں۔

۶

اور داؤُؔد بڑے شِکنجہ میں تھا کیونکہ لوگ اُسے سنگسار کرنے کو کہتے تھے اِسلئِے کہ لوگوں کے دِل اپنے بیٹوں اور بیِٹیوں کے لئِے نِہایت غمِگین تھے پر داؤُؔد نے خُداوند اپنے خُدا میں اپنے آپ کو مضبُوط کِیا۔

۷

اور داؤُؔد نے اخِؔیملک کے بیٹے ابی یاؔتر کاہِن سے کہا کہ ذرا افُود کو یہاں میرے پاس لے آ۔ سؔوابی یاتر افُود کو داؤُؔد کے پاس لے آیا۔

۸

اور داؤُؔد نے خُداوند سے پُوچھا کہ اگر مَیں اُس فَوج کا پِیچھا کرُوں تو کیا مَیں اُنکو جالُونگا۔؟ اُس نے اُس سے کہا کہ پِیچھا کر کیونکہ تُو یقِیناً اُنکو جالیگا اور ضرُور سب کُچھ چُھڑالائیگا۔

۹

سو داؤُؔد اور وہ چھ سَو آدمی جو اُسکے ساتھ تھے چلے اور بسؔور کی ندی پر پُہنچے جہاں وہ لوگ جو پِیچھے چھوڑے گئے ٹھہرے رہے۔

۱۰

پر داؤُؔد اور چار سَو آدمی پِیچھا کئِے چلے گئے کیونکہ دو سَو جو اَیسے تھک گئے تھے کہ بسؔور کی ندی کے پار نہ جا سکے پِیچھے رہ گئے۔

۱۱

اور اُنکو مَیدان میں ایک مِصری مِل گیا۔ اُسے وہ داؤُؔد کے پاس لے آئے اور اُسے روٹی دی۔ سو اُس نے کھائی اور اُسے پِینے کو پانی دِیا۔

۱۲

اور اُنہوں نے انجِیر کی ٹِکیا کا ایک ٹُکڑا اور کِشمِش کے دو خوشے اُسے دِئے۔ جب وہ کھا چُکا تو اُسکی جان میں جان آئی کیونکہ اُس نے تِین دِن اور تِین رات سے نہ روٹی کھائی تھی نہ پانی پِیا تھا۔

۱۳

تب داؤُؔد نے پُوچھا تو کِس کا آدمی ہے؟ اور تُو کہاں کا ہے؟ اُس نے کہا مَیں ایک مِصری جوان اور ایک عمالِیقی کا نوکر ہُوں اور میرا آقا مُجھ کو چھوڑ گیا کیونکہ تِین دِن ہُوئے کہ میں بِیمار پڑ گیا تھا۔

۱۴

ہم نے کریتِیوں کے جنُوب میں اور یہُؔوداہ کے مُلک میں اور کاؔلِب کے جنُوب میں لُوٹ مار کی اور صِقؔلاج کو آگ سے پُھونک دِیا۔

۱۵

داؤُؔد نے اُس سے کہا کیا تُو مُجھے اُس فَوج تک پُہنچا دیگا؟ اُس نے کہا کہ تُو مُجھ سے خُدا کی قََسم کھا کہ نہ تومُجھے قتل کریگا اور نہ مُجھے میرے آقا کے حوالہ کریگا تو مَیں تُجھ کو اُس فَوج تک پُہنچا دُونگا۔

۱۶

جب اُس نے اُسے وہاں پُہنچا دِیا تو دیکھا کہ وہ لوگ اُس ساری زمِین پر پَھیلے ہُوئے تھے اور اُس بُہت سے مال کے بب سے جو اُنہوں نے فِلسِتیوں کے مُلک اور یہُؔوداہ کے مُلک سے لُوٹا تھا کھاتے پِیتے اور ضِیافتیں اُڑا رہے تھے۔

۱۷

سو داؤُؔد رات کے پہلے پہر سے لیکر دُوسرے دِن کی شام تک اُنکو مارتا رہا اور اُن میں سے ایک بھی نہ بچا سِوا چار سَو جوانوں کے جو اُونٹوں پر چڑھ کر بھاگ گئے۔

۱۸

اور داؤُؔد نے سب کُچھ عمالِیقی لے گئے تھے چُھڑا لِیا اور اپنی دونوں بِیویوں کو بھی داؤُؔد نے چُھڑایا۔

۱۹

اور اُنکی کوئی چِیز گُم نہ ہُوئی نہ چھوٹی نہ بڑی نہ لڑکے نہ لڑکِیاں نہ لُوٹ کا مال نہ اَور کوئی چِیز جو اُنہوں نے لی تھی۔ داؤُؔد سب کا سب لَوٹا لایا۔

۲۰

اور داؤُؔد نے سب بھیڑبکریاں اور گائے بَیل لے لئِے اور وہ اُنکو باقی مواشی کے آگے یہ کہتے ہُوئے ہانک لائے کہ یہ داؤُؔد کی لُوٹ ہے۔

۲۱

اور داؤُؔد اُن دو سَو جوانوں کے پاس آیا جو اَیسے تھک گئے تھے کہ داؤُؔد کے پِیچھے پِیچھے نہ جا سکے اور جِنکو اُنہوں نے بسؔور کی ندی پر ٹھہرا دِیا تھا۔ وہ داؤُؔد اور اُسکے ساتھ کے لوگوں سے مِلنے کو نِکلے اور جب داؤُؔد اُن لوگوں کے نزدِیک پُہنچا تو اُس نے اُن سے خیروعافِیّت پُوچھی۔

۲۲

تب اُن لوگوں میں سے جو داؤُؔد کے ساتھ گئے تھے سب بدذات اور خبِیث لوگوں نے کہا چُونکہ یہ ہمارے ساتھ نہ گئے اِسلئِے ہم اِنکو اُس مال میں سے جو ہم نے چُھڑایا ہے کوئی حِصّہ نہیں دینگے سِوا ہر شخص کی بِیوی اور بال بچّوں کے تاکہ وہ اُنکو لیکر چلے جائیں۔

۲۳

تب داؤُؔد نے کہا اَے میرے بھائِیو تُم اِس مال کے ساتھ جو خُداوند نے ہم کو دِیا ہے اَیسا نہیں کرنے پاؤ گے کیونکہ اُسی نے ہم کو بچایا اور اُس فَوج کو جِس نے ہم پر چڑھائی کی ہمارے ہاتھ میں کر دِیا۔

۲۴

اور اِس امر میں تُمہاری مانیگا کون؟ کیونکہ جَیسا اُسکا حِصّہ ہے جو لڑائی میں جاتا ہے وَیسا ہی اُسکا حِصّہ ہو گا جو سامان کے پاس ٹھہرتا ہے۔ دونوں برابر حِصّہ پائینگے۔

۲۵

اور اُس دِن سے آگے کو اَیسا ہی رہا کہ اُس نے اِسرائؔیل کے لئِے یِہی قانُون اور آئین مُقرّر کِیا جو آج تک ہے۔

۲۶

اور جب داؤُؔد صِقلؔاج میں آیا تو اُس نے لُوٹ کے مال میں سے یہُؔوداہ کے بزُرگوں کے پاس جو اُسکے دوست تھے کُچھ کُچھ بھیجا اور کہا کہ دیکھو خُداوند کے دُشمنوں کے مال میں سے یہ تُمہارے لئِے ہدیہ ہے۔

۲۷

یہ اُنکے پاس جو بَؔیت ایل میں اور اُنکے پاس جر راماؔتُ الجنُوب میں اور اُنکے پاس جو یِتؔیر میں۔

۲۸

اور اُنکے پاس جو عؔروعیر میں اور اُنکے پاس جو سِفؔموت میں اور اُنکے پاس جو اِستؔموع میں۔

۲۹

اور اُن کے پاس جو رکِؔل میں اور اُنکے پاس جو یرحمئیلِیوں کے شہروں میں اور اُنکے پاس جو قینیوں کے شہروں میں۔

۳۰

اور اُنکے پاس جو حُرمؔہ میں اور اُنکے پاس جو کورعاساؔن میں اور اُنکے پاس جو عؔتاک میں۔

۳۱

اور اُنکے پاس جو حبُؔرون میں تھے اور اُن سب جگہوں میں جہاں جہاں داؤُؔد اور اُسکے لوگ پھِرا کرتے تھے بھیجا۔

Views
Personal tools
Navigation
Toolbox