1 Samuel 19 Urdu

From Textus Receptus

Jump to: navigation, search
19 سموئیل-۱

۱

اور ساؤُؔل نے اپنے بیٹے یُونؔتن اور اپنے سب خادِموں سے کہا کہ داؤُؔد کو مار ڈالو۔

۲

لیکن ساؤُؔل کا بیٹا یُونؔتن داؤُؔد سے بُہت خُوش تھا۔ سو یُونؔتن نے داؤُؔد سے کہا میرا باپ تیرے قتل کی فِکر میں ہے اِسلئِے تُو صُبح کو اپنا خیال رکھنا اور کِسی پوشِیدہ جگہ میں چِھپے رہنا۔

۳

اور مَیں باہر جا کر اُس مَیدان میں جہاں تُو ہوگا اپنے باپ کے پاس کھڑا ہُونگا اور اپنے باپ سے تیری بابت گُفتگُو کرُونگا اور اگر مُجھے کُچھ معلُوم ہو جائے تو تُجھے بتا دُونگا۔

۴

اور یُونؔتن نے اپنے باپ ساؤُؔل سے داؤُؔد کی تعرِیف کی اور کہا کہ بادشاہ اپنے خادِم داؤُؔد سے بدی نہ کرے کیونکہ اُس نے تیرا کُچھ گُناہ نہیں کِیا بلکہ تیرے لئِے اُسکے کام بُہت اچھّے رہے ہیں۔

۵

کیونکہ اُس نے اپنی جان ہتھیلی پر رکھّی اور اُس فِلستی کو قتل کِیا اور خُداوند نے سب اِسرائیلِیوں کے لئِے بڑی فتح کرائی۔ تُو نے یہ دیکھا اور خُوش ہُئوا۔ پس تُو کِس لئِے داؤُؔد کو بے سبب قتل کرکے بے گُناہ کے خُون کا مُجرِم بننا چاہتا ہے؟۔

۶

اور ساؤُؔل نے یوُنؔتن کی بات سُنی اور ساؤُؔل نے قَسم کھا کر کہا کہ خُداوند کی حیات کی قَسم ہے وہ مارا نہیں جائیگا۔

۷

اور یُونؔتن نے داؤُؔد کو بُلایا اور اُس نے وہ سب باتیں اُسکو بتائِیں اور یُونؔتن داؤُؔد کو ساؤُؔل کے پاس لایا اور وہ پہلے کی طرح اُسکے پاس رہنے لگا۔

۸

اور پھِر جنگ ہُوئی اور داؤُؔد نِکلا اور فِلسِتیوں سے لڑا اور بڑی خُونریزی کے ساتھ اُنکو قتل کِیا اور وہ اُسکے سامنے سے بھاگے۔

۹

اور خُداوند کی طرف سے ایک بُری رُوح ساؤُؔل پر جب وہ اپنے گھر میں اپنا بھالا اپنے ہاتھ میں لئِے بَیٹھا تھا چڑھی اور داؤُؔد ہاتھ سے بجا رہا تھا۔

۱۰

اور ساؤُؔل نے چاہا کہ داؤُؔد کو دِیوار کے ساتھ بھالے سے چھیددے پر وہ ساؤُؔل کے آگے سے ہٹ گیا اور بھالا دِیوار میں جا گُھسا اور داؤُؔد بھاگا اور اُس رات بچ گیا۔

۱۱

اور ساؤُؔل نے داؤُؔد کے گھر پر قاصِد بھیجے کہ اُسکی تاک میں رہیں اور صُبح کو اُسے مار ڈالیں۔ سو داؤُؔد کی بِیوی مِؔیکل نے اُس سے کہا اگر آج کی رات تُو اپنی جان نہ بچائے تو کل مارا جائیگا۔

۱۲

اور مِؔیکل نے داؤُؔد سے کو کھِڑکی سے اُتار دِیا۔ سو وہ چل دِیا اور بھاگ کر بچ گیا۔

۱۳

اور مِؔیکل نے ایک بُت کو لیکر پلنگ پر لِٹا دِیا اور بکرِیوں کے بال کا تِکیہ سرہانے رکھ کر اُسے کپڑوں سے ڈھانک دِیا۔

۱۴

اور جب ساؤُؔل نے داؤُؔد کے پکڑنے کو قاصِد بھیجے تو وہ کہنے لگی کہ وہ بِیمار ہے۔

۱۵

اور ساؤُؔل نے ہرکاروں کو بھیجا کہ داؤُؔد کو دیکھیں اور کہا کہ اُسے پلنگ سمیت میرے پاس لاؤ کہ مَیں اُسے قتل کرُوں۔

۱۶

اور جب وہ قاصِد اندر آئے تو دیکھا کہ پلنگ پر بُت پڑا ہے اور اُسکے سرہانے بکرِیوں کے بال کا تِکیہ ہے۔

۱۷

تب ساؤُؔل نے مِؔیکل سے کہا کہ تُو نے مُجھ سے کیوں اَیسی دغا کی اور میرے دُشمن کو اَیسا جانے دِیا کہ وہ بچ نِکلا؟ مِؔیکل نے ساؤُؔل کو جواب دِیا کہ وہ مُجھ سے کہنے لگا مُجھے جانے دے۔ مَیں کیوں تُجھے مار ڈالُوں؟۔

۱۸

اور داؤُؔد بھاگ کر بچ نِکلا اور راؔمہ میں سؔموئیل کے پاس آکر جو کُچھ ساؤُؔل نے اُس سے کِیا تھا سب اُسکو بتایا۔ تب وہ اور سوئؔیل دونوں نیؔوت میں جا کر رہنے لگے۔

۱۹

اور ساؤُؔل کو خبر مِلی کہ داؤُؔد راؔمہ کے بِیچ نیؔوت میں ہے۔

۲۰

اور ساؤُؔل نے داؤُؔد کو پکڑنے کو قاصِد بھیجے اور اُنہوں نے جو دیکھا کہ نِبیوں کا مجمع نبُوّت کر رہا ہے اور سؔموئیل اُنکا پیشوا بنا کھڑا ہے تو خُدا کی رُو ح ساؤُؔل کے قاصِدوں پر نازِل ہُوئی اور وہ بھی نبُوّت کرنے لگے۔

۲۱

اور جب ساؤُؔل تک یہ خبر پُہنچی تو اُس نے اَور قاصِد بھیجے اور وہ بھی نبُوّت کرنے لگے اور ساؤُؔل نے پھِر تِیسری بار اَور قاصِد بھیجے اور وہ بھی نبُوّت کرے لگے۔

۲۲

تب وہ آپ راؔمہ کو چلا اور اُس بڑے کُنوئیں پر جو سِؔیکو میں ہے پُہنچکر پُوچھنے لگا کہ سؔموئیل اور داؤُؔد کہاں ہیں؟ اور کِسی نے کہا کہ دیکھ وہ راؔمہ کے بِیچ نیؔوت میں ہیں۔

۲۳

تب وہ اُدھر راؔمہ کے نیؔوت کی طرف چلا اور خُدا کی رُوح اُس پر بھی نازِل ہُوئی اور وہ چلتے چلتے نبُوّت کرتا ہُئوا راؔمہ کے نیؔوت میں پُہنچا۔

۲۴

اور اُس نے بھی اپنے کپرے اُتارے اور وہ بھی سؔموئیل کے آگے نبُوّت کرنے لگا اور اُس سارے دِن اور ساری رات ننگا پڑا رہا۔ اِسلئِے یہ کہاوت چلی کیا ساؤُؔل بھی نِبیوں میں ہے؟۔

Views
Personal tools
Navigation
Toolbox