1 Chronicles 15 Urdu

From Textus Receptus

(Difference between revisions)
Jump to: navigation, search

Erasmus (Talk | contribs)
(New page: {{Books of the Old Testament Urdu}} 15 تواریخ-۱ <big><div style="text-align: right;"><span style="font-family:Jameel Noori Nastaleeq;"> ۱ اور داؤُؔد نے داؤُؔد ک...)
Next diff →

Current revision

15 تواریخ-۱

۱

اور داؤُؔد نے داؤُؔد کے شہر میں اپنے لئِے محلّ بنائے اور خُدا کے صندُوق کے لئِے ایک جگہ تیّار کر کے اُسکے لئِے ایک خَیمہ کھڑا کِیا۔

۲

تب داؤُؔد نے کہا کہ لاوِیوں کے سِوا اَور کِسی کو خُدا کے صندُوق کو اُٹھانا نہیں چاہئے کیونکہ خُداوند نے اُن ہی کو چُنا ہے کہ خُدا کے صندُوق کو اُٹھائیں اور ہمیشہ اُسکی خِدمت کریں۔

۳

اور داؤُؔد نے سارے اِسرائؔیل کو یروشلِؔیم میں جمع کِیا تا کہ خُداوند کے صندُوق کو اُس جگہ جو اُس نے اُسکے لئِے تیّار کی تھی لے آئیں۔

۴

اور داؤُؔد نے بنی ہارُون کو اور لاویوں کو اِکٹّھا کِیا۔

۵

یعنی بنی قِہات میں سے اُؔوری ایل سردار اور اُسکے ایک سَو بِیس بھائیوں کو۔

۶

بنی مِراری میں سے عساؔیاہ سردار اور اُس کے دو سَو بِیس بھائیوں کو۔

۷

بنی جیرسوم میں سے یُؔوایل سردار اور اُسکے ایک سَو تِیس بھائِیوں کو۔

۸

بنی الِیصفن میں سے سمعیاؔہ سردار اور اُسکے دو سَو بھائِیوں کو۔

۹

بنی جرُون میں سے الؔی ایل سردار اور اُسکے اسّی بھائِیوں کو۔

۱۰

بنی عُزّی ایل میں سے عِمّؔینداب سردار اور اُسکے ایک سَو بارہ بھائیوں کو۔

۱۱

اور داؤُؔد نے صدُؔوق اور ابیاؔتر کاہِنوں کو اور اُؔوری ایل اور عساؔیاہ اور یُؔوایل اور سمعؔیاہ اور الؔی ایل اور عِمّؔینداب لاویوں کو بُلایا۔

۱۲

اور اُن سے کہا کہ تُم لاویوں کے آبائی خاندانوں کے سردار ہو۔ تُم اپنے آپ کو پاک کرو۔ تُم بھی اور تُمہارے بھائی بھی تا کہ تُم خُداوند اِسرائؔیل کے خُدا کے صندُوق کو اُس جگہ جو مَیں نے اُسکے لئِے تیّار کی ہے لاسکو۔

۱۳

کیونکہ جب تُم نے پہلی بار اُسے نہ اُٹھایا تو خُداوند ہمارا خُدا ہم پو ٹُوٹ پڑا کیونکہ ہم آئِین کے مُطابِق اُسکے طالِب نہیں ہُوئے تھے۔

۱۴

تب کاہِنوں اور لاویوں نے خُداوند اِسرائؔیل کے خُدا کے صندُوق کو لانے کے لانے کے لئِے اپنے آپ کو پاک کِیا۔

۱۵

اور بنی لاوی نے خُدا کے صندُوق کو جَیسا مُؔوسیٰ نے خُداوند کے کلام کے مُوافِق حُکم کِیا تھا چوبوں سے اپنے کندھوں پر اُٹھا لِیا۔

۱۶

اور داؤُؔد نے لاویوں کے سرداروں کو فرمایا کہ اپنے بھائِیوں میں سے گانے والوں کو مُقرّر کریں کہ مُوسِیقی کے ساز یعنی سِتار اور بربط اور جھانجھ بجائیں اور آواز بُلند کرکے خُوشی سے گائیں۔

۱۷

سو لاویوں نے ہَیماؔن بِن یُؔوایل کو مُقرّر کِیا اور اُسکے بھائِیوں میں سے آسؔف بِن برکیاؔہ کو اور اُنکے بھائِیوں بنی مرِاری میں سے ایتاؔن بِن قُؔوسِیاہ کو۔

۱۸

اور اُنکے ساتھ اُنکے دُوسرے درجہ کے بھائیوں یعنی زکؔرِیاہ بؔین اور یعزِیئؔیل اور سِؔمیرا موت اور یحیِئؔیل اور عنّؔی اور اِلؔیاب اور بِناؔیاہ اور معؔسیاہ اور مِتّؔتیاہ اور اِلفلہُؔو اور مِقؔنیاہ اور عوبیدؔادوم اور یعؔی ایل کو جو دربان تھے۔

۱۹

پس گانے والے ہَیماؔن۔ آسؔف اور ایتاؔن مُقرّر ہُوئے کہ پِیتل کی جھانجھوں کو زور سے بجائیں۔

۲۰

اور زکؔریاہ اور عزیئؔیل اور سمِؔیرا موت اور یحیِئؔیل اور غنّؔی اور اِلؔیاب اور معؔسیاہ اور بِناؔیاہ سِتار کو علاموت راگ پر چھیڑیں۔

۲۱

اور مِتّؔتیاہ اور اِلؔفلہُو اور مِقؔنیاہ اور عوبیدؔادوم اور یعیِئؔیل اور عزؔزیاہ شمِنیت راگ پرسِتار بجائیں۔

۲۲

اور کناؔنیاہ لاویوں کا سردار گِیت پر مُقرّر تھا۔ وہ گِیت سِکھاتا تھا کیونکہ وہ بڑا ہی ماہِر تھا۔

۲۳

اور برکؔیاہ اور الؔقانہ صندُوق کے دربان تھے۔

۲۴

اور شؔبنیاہ اور یہُؔوسفط اور نتنِؔئیل اور عماؔسی اور زکؔریاہ اور بِناؔیاہ اور الِؔیعزر کاہِن خُدا کے صندُوق کے آگے آگے نرسِنگے پُھونکتے جاتے تھے اور عوبیدؔادوم اور یحؔیاہ صندُوق کے دربان تھے۔

۲۵

سو داؤُؔد اور اِسرائؔیل کے بزُرگ اور ہزاروں کے سردار روانہ ہُوئے کہ خُداوند کے عہد کے صندُوق کو عوبیدؔادوم کے گھر سے خُوشی مناتے ہُوئے لائیں۔

۲۶

اور اَیسا ہُئوا کہ جب خُدا نے اُن لاویوں کی جو خُداوند کے عہد کے صندُوق کو اُٹھائے ہُوئے تھے مدد کی تو اُنہوں نے سات بَیل اور سات مینڈھے قُربان کئِے۔

۲۷

اور داؤُؔد اور سب لاوی جو صندُوق کو اُٹھائے ہُوئے تھے اور گانے والے اور گانے والوں کے ساتھ کناؔنیاہ جو گانے میں اُستاد تھا کتانی پَیراہنوں سے مُلبّس تھے اور داؤُؔد کتان کا افُود بھی پہنے تھا۔

۲۸

یُوں سب اِسرائیلی نعرہ مارتے اور نرسِنگوں اور تُراہِیوں اور جھانجھوں کی آواز کے ساتھ سِتار اور بربط کو زور سے بجاتے ہُوئے خُداوند کے عہد کے صندُوق کو لائے۔

۲۹

اور اَیسا ہُئوا کہ جب خُداوند کے عہد کا صندُوق داؤُؔد کے شہر میں پُہنچا تو ساؤُؔل کی بیٹی مِیکؔل نے کھِڑکی میں سے جھانک کر داؤُؔد بادشاہ کو خُوب ناچتے کُودتے دیکھا اور اُس نے اپنے دِل میں اُسکو حقیِر جانا۔

Views
Personal tools
Navigation
Toolbox